Image default
Urdu News تعلیم

آن لائن تعلیم اور ای لرننگ

اگر آن لائن تعلیم کا ذکر کیا جائے تو ہائر ایجوکیشن میں پاکستان میں ورچوئل یونیورسٹی اسے بہت احسن طریقے سے سر انجام دے رہی ہے جبکہ سیکنڈری، ہائر سیکنڈری کی سطح پر پاکستان میں آن لائن تعلیم کا کوئی قابل ذکر ادارہ موجود نہیں ہے۔

پاکستان جیسے ملک میں جہاں تقریباً 60 فیصد سے زائد آبادی دیہی علاقے میں آباد ہے، وہاں آن لائن تعلیم کا نفاذ انتہائی مشکل ہے۔

لاک ڈاؤن کے بعد آن لائن تعلیم پر بحث کا آغاز ہوا۔ اس سے قبل صرف ہائر ایجوکیشن کےلیے آن لائن تعلیم کا موضوع زیر بحث رہا لیکن اب لاک ڈاؤن کے سبب سیکنڈری اور ہائر سیکنڈری کے طالب علموں کےلیے بھی آن لائن طریقہ تعلیم پر بحث جاری ہے۔ یہاں پہلے یہ جاننا ضروری ہے کہ آن لائن تعلیم سے ہمیں کیا فوائد حاصل ہوسکتے ہیں۔

آن لائن تعلیم کا ایک فائدہ یہ ہے کہ طلبا کسی مقررہ شیڈول کے پابند نہیں ہوتے۔ کلاس روم کی ایک روایتی ترتیب میں، کلاس کے اوقات طے ہوتے ہیں اور طالب علم کو اس پر کوئی اختیار نہیں ہوتا۔ زیادہ تر لوگ جو آن لائن تعلیم کا انتخاب کرتے ہیں وہ تعلیم اور دوسرے کاموں میں توازن قائم کرنے میں آسانی محسوس کرتے ہیں۔

دوسرا فائدہ یہ کہ مختلف وجوہ کی بنا پر آن لائن تعلیم پر کم لاگت آسکتی ہے۔ مثال کے طور پر، سفر کرنے کےلیے کوئی لاگت نہیں۔ مختلف اخراجات جو نقل و حمل سے متعلق ہیں، جیسے ایندھن، پارکنگ، کاروں کی دیکھ بھال اور عوامی نقل و حمل کے اخراجات آن لائن طالب علم کو متاثر نہیں کرتے ہیں۔

جبکہ انتہائی اہم، آپ کو درکار تمام معلومات محفوظ طریقے سے کسی آن لائن ڈیٹا بیس میں محفوظ ہوتی ہیں۔ اس میں لیکچرز، دستاویزات، تربیتی مواد اور ای میلز جیسی چیزیں شامل ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر لیکچرز کے بعد بھی کوئی ایسی چیز ہے جس کی وضاحت کی ضرورت ہو تو طالب علم قیمتی وقت کی بچت کرتے ہوئے، ان دستاویزات تک تیزی سے رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔

Related posts

ملک میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک لاکھ 95 ہزار سے زائد

Talon News

مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے مزید 2 نوجوانوں کو شہید کردیا

Talon News

پنجاب حکومت نے صنعتیں اور بازار کھولنے کیلئے سفارشات وفاقی حکومت کو پیش کردیں

Talon News

Leave a Comment